دل دیاں گللاں، صفہ نمبر گیارہ، شاعر دانیال ملک

دل دیاں گللاں، صفہ نمبر گیارہ، شاعر دانیال ملک

ہم دنیا کے ستاے ہوے رہ رہے ہے
محبت کی خاطر روز مر رہے ہے
کچھ پل ہی ملنے آ جاتی ہمے اے بےوفا
ذرا دیکھتی ہمے ہم کس طرح جی رہے ہے

مڑ کے دیکھ ذرا کیا لگ رہی ہے یار
آنکھیں تھم جاے دل رک جاے ایسی لگ رہی ہے وہ یار
سن لیا ہم نے اسکی سانس کی آہٹ کو
روک جاتی ہماری سانسے اسکی سانسوں کو محسوس کرتے کرتے

لوگ ہزار باتیں سناے گے اس عشق میں ہمے
ہم بھی کہ دے گے سب کو ہم اسکی محبت میں جی رہے ہے

دل دیاں گللاں، شاعر دانیال ملک

Copyrights © 2019. All rights reserved. www.pakistanonline.org

Daniyal Malik

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Inline
Inline