دل دیاں گللاں، صفہ نمبر چھ ،شاعر دانیال ملک

دل دیاں گللاں، صفہ نمبر چھ ،شاعر دانیال ملک

جب کبھی اسے یاد کیا ہے کوئی افسوس نہیں
اے خدا کوئی شکوہ نہیں بس کمبخت جینا محال کیا ہے

دوستی کی اسے تو دشمنی کیا ہو گی
چمن میں پھول بھی تیرے جیسے ہی ہوں گے
لوگ اکثر پوچھتے ہے عشق اگر ہو جاے تو کیا ہو
ہم کہتے ہے دیکھ لے ہمے یہی ہو گا

اسکا میرے خیال میں آنا اور ہس کے چلے جانا
یاد آیا ہمے بھی کہ آج تو ہے ملنے جانا
دیکھا جو اسکو پہلی بار دل تھام کے سننا یار
صورت کیا تھی اسکی دیکھتے ہی رہ گے یار

چاند میں اسکی صورت نظر آنا اور میرا اس میں کھو جانا
یہ عشق ہے یا عادت پتا نہیں پر کیا مزا ہے

دل دیاں گللاں، شاعر دانیال ملک

Copyrights © 2019. All rights reserved. www.pakistanonline.org

Daniyal Malik

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Inline
Inline