دل دیاں گللاں،صفہ نمبر چار، شاعر دانیال ملک

دل دیاں گللاں،صفہ نمبر چار، شاعر دانیال ملک

بادلوں نے چھپا دیا چاند کو مدت ہوئی اسے دیکھے
اندھیرا چھا گیا ہر طرف مدت ہوئی اسکی صورت دیکھے

محبت کی گلی میں نا جانا عشق ہو جاے گا یار
مدت ہوئی اسے دیکھے کمبخت پھر بھی کیا ہو جاے گا یار

چاند جیسی لگتی ہے اور دل میں بس چکی ہے
حالت اب عشق جیسی اور قبول محبت لگتی ہے

عشق میں کوئی حد نہیں ہوتی حد ہو تو وہ عشق نہیں ہوتا
جو کر بیٹھے ہے اس سے پوچھو بے جان چیز کا دکھ کیا ہوتا

Daniyal Malik

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Inline
Inline