دل دیاں گللاں،صفہ نمبر سولہ، شاعر دانیال ملک

دل دیاں گللاں،صفہ نمبر سولہ، شاعر دانیال ملک

ایک بات تھی محبت میں جو کہنی تھی اسکو
ظلم بھی مر گیا اس بے وفائی کے سامنے

آنسو نہیں دیکھ سکتا اسکی انکھوں میں
اسی لیا چھوڑ دیا اسے اسکی خوشی کی خاطر

عشق مار دے اگر تو بھی کچھ غم نہیں
سب اگر چھوڑ دے تب بھی غم نہیں

پیار کی بات کرتے ہو یہ ظالم اسی میں دکھ دیتے ہے
کبھی ہساتے ہے کبھی رولاتے ہے اور کبھی مار دیتے ہے

دل دیاں گللاں، شاعر دانیال ملک

Copyrights © 2019. All rights reserved. www.pakistanonline.org

Daniyal Malik

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Inline
Inline