دل دیاں گللاں، صفہ نمبر اٹھارہ، شاعر دانیال ملک

دل دیاں گللاں، صفہ نمبر اٹھارہ، شاعر دانیال ملک

میں اس سے محبت کرتا ہو وہ یہ بات جانتی ہے
پہلے ٹھکراتی تھی اس بات کو اب مانتی ہے
خوبصورت آنکھیں اور ان میں وہ چمک
روک دے گی ہمے کوئی بھی کام کرنے سے

پاؤں دھو کے پیو اگر محبت کے خاطر آی ہو
اگر منافق ہے تو میں پاس سے گزرنے والا بھی نہیں

محبت محبت کرتے ہو پھر نبھانے سے کیوں ڈرتے ہو
یہ احساس ہے دللگی کا جانتے ہو تو کرنے سے کیوں ڈرتے ہو


محبت عشق کی صدا ہوتی ہے
ہو جاے تو کمال ہوتی ہے
میں ڈرتا تھا اسے کھونے سے
وہ اسی بات پے ہسا کرتی ہے

دل دیاں گللاں، شاعر دانیال ملک

Copyrights © 2019. All rights reserved. www.pakistanonline.org

Daniyal Malik

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Inline
Inline